دنیا کے سب سے امیر غریب

مکیش امبانی کا نام تو آپ نے سنا ہی ہوگا۔ ریلائنس انڈسٹریز کے مالک اور ہندوستان کے سب سے امیر شخص لیکن دنیا میں دس بیس لوگ ان سے بھی زیادہ امیر ہیں۔ بے پناہ دولت کے باوجود وہ خود سادگی سے رہنا پسند کرتے ہیں، اور اپنے بچوں کو بھی انھوں نے سادگی ہی کی تربیت دی ہے۔

مکیش امبانی بھارت کے امیر ترین شخص ہیں اور ان کا گھر دنیا کا سب سے مہنگا گھر ہے

ممبئی میں ان کا گھر ان کی سادہ طبعیت کا عکاس ہے۔ فوربز میگزین کے مطابق یہ دنیا کا مہنگا ترین گھر ہے اور اس کی مالیت تقریباً ایک ارب ڈالر یا 60 ارب روپے بتائی جاتی ہے۔ اگر آپ کو یہ سمجھنے میں اب بھی دشواری ہو رہی ہو کہ یہ کتنی رقم ہوئی تو بس یوں سمجھیے کہ اگر آپ کا خاندان بڑا ہو تو اس عمارت کو بیچ کر ایک ایک کروڑ روپے کے چھ ہزار فلیٹ خرید سکتے ہیں۔

لیکن اگر آپ نے ایسا کیا تو وہ چھ سو لوگ بے روزگار ہوجائیں گے جو اس گھر میں کام کرتے ہیں۔

مکیش امبانی کے بیٹے آکاش اب جوان ہوگئے ہیں اور بحیثیت صنعت کار انھوں نے اپنا پہلا انٹرویو دیا ہے جس میں ان کا دعویٰ ہے کہ ان کی والدہ نیتا امبانی نے شروع سے ہی انھیں سادگی کا سبق پڑھایا اور انھیں ہمیشہ ہی پیسے کی قدر کرنا سکھایا گیا۔

انھوں نے کہا: ’جب ہم سکول میں تھے تو اپنے دوستوں کے مقابلے میں ہمیں جیب خرچ برائے نام ہی ملتا تھا، یونیورسٹی میں بھی ہمارا پورا خرچ ممی خود اپنے ہاتھ سے ہی دیتی تھیں۔‘

مکیش امبانی کے پشت پر نیلے شرٹ میں ان کے بیٹے آکاش امبانی کو دیکھا جا سکتا ہے

دو تین سال پہلے آکاش کی والدہ نیتا امبانی نے بھی ایک انٹرویو میں بتایا تھا کہ انھوں نے اپنے بچوں کو بگڑنے سے کیسے بچایا اور ان کی غیر معمولی اور ہوش ربا قربانیوں کی داستان سن کر بہت سے غریبوں نے شاید شکر ادا کیا ہوگا کہ انھیں سادگی سے رہنے کے لیے اتنی محنت نہیں کرنی پڑتی۔

مثال کے طور پر نیتا امبانی کا یہ اصول تھا کہ چھٹیوں میں جب امریکہ سے بچوں کے گھر لوٹنے کا وقت ہوتا تو انھیں لانے کے لیے وہ اپنا پرائیویٹ جیٹ کبھی نہیں بھیجتی تھیں۔ بے چارے بچوں کو جہاز میں دوسرے ایسے لوگوں کے ساتھ سفر کرنا پڑتا ہوگا جو کبھی خود اپنا جیٹ نہیں خرید پائے۔

بچوں کی پرورش کیسے کی جائے، نیتا، مکیش اور آکاش امبانی کو اس پر ایک کتاب ضرور لکھنی چاہیے۔ لیکن جب تک یہ کتاب شائع ہو آپ ذرا خیال رکھیے گا کہ بچوں کو گھر لانے کے لیے پرائیویٹ جیٹ کبھی استعمال نہیں کرنا چاہیے۔

Source: Suhail Haleem, BBC Urdu

  • ayesha

    Its so good to see that u also cater urdu language… I like urdu more than text ….

  • Rehmat Ullah Kundi

    Are there any Mukesh Ambanis in Pakistan. There may be but their private life in out of reach of public eye.

  • Sahib Karim Khan

    Sir, if you don’t mind I’d like to ask you a small question?
    Do you have a car? If yes, do you send your kids to school on a car or on a bicycle or on foot like most of the poor folks do? 🙂

  • Khalid

    It’s worth reading, thanks for sharing 🙂

  • Kamran Ahmad Kami

    It’s good practice. But useless as they are infidels 🙁

  • madiha

    I will not appriciate it india is a very big country and only few of the people are rich means there is no transfer of money as our religion focus on transfer of money from rich to poor islam focus on a sociaty of equality so the money should not remain in few hands.v have our own role models to be admired instead of these people

  • Sana A. Rehman

    intersting and entertaining

  • Phyza

    whats the point behind this article?